Saturday, 31 May 2014

Kahan Hai Ab Tumhari Woh Mohabbat Itney Saalon Ki

Sad Urdu Ghazals

وہی درپیش ہے پھر زندگی خوابوں خیالوں کی
کہاں ہے اب تمہاری وہ محبت اتنے سالوں کی

اگر میرے مقدر میں اندھیرا ہی اندھیرا تھا
کہانی کیوں سنائ تھی مجھے تم نے اجالوں کی

بڑا ہے فرق دونوں میں، مگر دلچسپ ہیں دونوں
تیری دنیا جوابوں کی، میری دنیا سوالوں کی

تمھیں جب سے میں لکھتا ہوں،تمھیں جب سے میں پڑھتا ہوں
ضرورت ہی نہیں پڑتی کتابوں کے حوالوں کی

تعلق جوڑنا اور توڑنا تم سے کوئ سیکھے
کہاں سے آگئ تم کو مہارت ایسی چالوں کی

شگفتہ دل کو رکھا ہے فقط اس واسطے ہم نے
 ... ضرورت پھر نہ پڑ جاۓ تمھیں میری مثالوں کی


Wohi Darpaish He Phir Zindagi Khwabon Khayalon Ki
Kahan Hai Ab Tumhari Woh Mohabbat Itney Saalon Ki

Agar Merey Muqaddar Men Andhera He Andhera Tha
Kahani Kiun Sunaai Thi Mujhe Tum Ne Ujaalon Ki

Bara Hai Farq Dono Mein, Magar Dil-chasp Hein Dono
Teri Dunya Jawabon Ki Meri Dunya Sawaalon Ki

Tumhe Jabse Mein Likhta Hoon Tumhe Jabse Mein Parhta Hoon
Zaroorat He Nahi  Parti  Kitaabon K Hawaalon Ki

Ta'alluq Jorna Aur Torna Tum Se Koi Seekhay
Kahan Se Aa Gai Tum Ko Muhaarat Aisi Chaalon Ki

Shagufta Dil Ko Rakha Hai Faqat Is Waastey Hum Ne
Zaroorat Phir Na Parr Jaey Tumhen Meri Misaalon Ki ...

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Khuwaab Mein Haath Thaamney Waaley

Khuwaab Urdu Poetry

خواب میں ہاتھ تھــامنے والے
دیکھ بستر سے گر پڑا ہوں میں

Khuwaab Mein Haath Thaamney Waaley
Daikh Bistar Se Gir Parra Hoon Mein

 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Friday, 30 May 2014

Aisay Mosam Mein Mohabbat Pay Zawaal Aatey Hein



مجھ سے کہتا ہے کبھی دل میں ملال آتے ہیں
کیسے کیسے میرے دشمن کو سوال آتے ہیں

یہ جو ہم روتے ہیں چھپ کر کبھی تنہائی میں
رفتہ رفتہ تجھے آنکھوں سے نکال آتے ہیں

ہم محبت پے بھی احسان کوئی رکھتے نہیں
نیکیاں کرتے ہیں دریاؤں میں ڈال آتے ہیں

بس اسی خوف سے سوئے نہیں اک مدت سے
ہجر ملتا ہے اگر خواب وصال آتے ہیں

پھول کھل جائیں تو اس شخص سے کم کم ملنا
..ایسے موسم میں محبت پے زوال آتے ہیں
  

Mujhse Kehta Hai Kabhi Dil Mein Malaal Aatey Hein
Kaisey Kaisey Merey Dushman Ko Sawaal Aatey Hein

Yeh Jo Hum Rotey Hein Chup Kar Kabhi Tanhai Mein
Rafta Rafta Tujhe Aankhon Se Nikaal Aatey Hein

Hum Mohabbat Pe Bhi Ehsaan Koi Rakhte  Nahi
Naikiyaan Karte Hein Daryaaon Mein Daal Aatey Hein

Bus Isi Khof Se Soey Nahi Ik Muddat Se
Hijr Milta Hai Agar Khuwaab-E-Visaal Aatey Hein

Phool Khil Jaen Tou Us Shakhs Se Kam Kam Milna
Aisay Mosam Mein Mohabbat Pay Zawaal Aatey Hein..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Thursday, 29 May 2014

Us Ka Ishq Tha Chaand Jaisa

Ishq Sad Poetry

اس کا عشق تھا  چاند جیسا 
پورا  ہوا  تو  گھٹنے  لگا

Uska Ishq Tha Chaand Jaisa
Poora Hua Tou Ghatney Laga

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Wednesday, 28 May 2014

Abhi Kuch Aur Hawaon Ko Rukh Badalney Dey

Urdu Sad Ghazal

گرفتِ خاک سے باہر مجھے نکلنے دے
اے دشت خواب مجھے دو قدم تو چلنے دے

جو ہو سکے مرے اشکوں کو منجمد مت کر
ہوائے شہر خرابی مجھے پگھلنے دے

اے دشت شام کی پاگل ہوا بجھا نہ مجھے
نواحِ شب میں کوئی تو چراغ جلنے دے

نہ روک مجھ کو کہیں بھی تو اے ستارۂ ہجر
میں چل پڑا ہوں، کوئی راستہ نکلنے دے

وہ قطرہ قطرہ سحر آنکھ میں طلوع تو ہو
اے ماہِ شب، نم شبنم میں مجھ کو ڈھلنے دے

اسے کہو، نہ ابھی بال و پر کشادہ کرے
 .... ابھی کچھ اور ہواؤں کو رخ بدلنے دے


Giraft-e-Khaak  Se Bahir Zara Nikalney  Dey
Ay Dasht-e-Khuwab Mujhe Do Qadam Tou Chalney Dey

Jo Ho Sakey Merey Ashkon Ko Munjamid Mat Kar
Hawaey Shehr-e-Kharabi Mujhe Pighalney  Dey

Ay Dasht-e-Shaam Ki Pagal Hawa Bujha Na Mujhe
Nawah-e-Shab Mein Koi Tou Charaag Jalney Dey

Na Rok Mujhko Kaheen Bhi Tu Ay Sitara-e-Hijr
Mein Chal Parra Hoon, Koi Raasta Nikalney Dey

Woh Qatra Qatra Sehar Aankh Mein Tuloo Tou Ho
Ay Maah-e-Shab, Num Shabnum Mein Mujhko Dhalney Dey

Usay Kaho Na Abhi Baal-o-Par Kushadaa’h Karey
Abhi Kuch Aur Hawaon Ko Rukh Badalney Dey ....


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Tuesday, 27 May 2014

Tumhein Hum Yaad Karte Hein Bus Itna Yaad Rakhna Tum

Sad SMS Poetry

ملاقاتیں نہیں ممکن ہمیں احساس ہے لیکن
تمہیں ہم یاد کرتے ہیں بس اتنا یاد رکھنا تم

Mulaqaatein Nahi Mumkin Hamein Ehsaas Hai Lekin
Tumhein Hum Yaad Karte Hein Bus Itna Yaad Rakhna Tum

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Monday, 26 May 2014

Shokh Rukh Pe Haya Jhilmilaney Lagi

Romantic Poetry

شوخ رخ پہ حیا جھلملانے لگی
زِندگی گیت خوشیوں کے گانے لگی

عرش والوں نے چھوڑی کوئی پھلجھڑی
یا وُہ غنچہ دَہَن مسکرانے لگی

کورے کاغذ پہ لکھا جو نام آپ کا
کاغذی پھول سے خوشبو آنے لگی
       
میں تو ہم شہر ہونے پہ بے چین تھا
کل سے وُہ گھر میں بھی آنے جانے لگی

زُلف کا پھول اُس نے مجھے دے دِیا
عمر بھر کی اُداسی ٹھکانے لگی

ایک دُنیا کو گڑیا پہ رَشک آ گیا
لیلیٰ خود سج کے گڑیا سجانے لگی

چور زُلفوں کے تنکے سے پکڑا گیا
دِل چرا کر وُہ نظریں چرانے لگی

پھول توڑے بنا اُس پہ لب رَکھ دِئیے
چاہنے کا قرینہ سکھانے لگی

قیس کل شب ملایا انہیں چاند سے
چاندنی اُن سے شہ مات کھانے لگی ..


Shokh Rukh Pe Haya Jhilmilaney Lagi
Zindagi Geet Khushyon K Gaaney Lagi

Arsh Waalon Ne Chorri Koi Phuljharri
Yaa Woh Guncha Dehan Muskurane Lagi

Koray Kaagaz Pe Likha Jo Naam Apka
Kaagzi Phool Se Khushbu Aaney Lagi

Mein Tou Hum-Shehar Honey Pe Bechain Tha
Kal Se Woh Ghar Mein Bhi Aaney Janey Lagi

Zulf Ka Phool Us Ne Mujhe De Diya
Umar Bhar Ki Udaasi Thikaney Lagi

Aik Dunya Ko Gurrya Pe Rashk Aagaya
Laila Saj Dhaj K Gurrya Sajaney Lagi

Chor Zulfon Ka Tinkey Se Pakrra Gaya
Dil Chura Kar Woh Nazrein Churaney Lagi

Phool Torrey Bina Us Pe Lab Rakh Diye
Chahaney Ka Tareeqa Sikhaney Lagi

Qais Kal Shab Milaya Uneh Chaand Se
 .. Chaandni Un Se Shay Maat Khaney Lagi

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Sunday, 25 May 2014

Mein Kisi Kaam Ka Nahi Warna

Sad Urdu Poetry

میں کسی کام کا نہیں ورنہ
وہ کسی کام سے ہی آ جاتا

Mein Kisi Kaam Ka Nahi Warna
Woh Kisi Kaam Se He Aajata

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Saturday, 24 May 2014

Bahaar Kia Ab Khizaan Bhi Mujhko Galey Lagaey Tou Kuch Na Paey

Sad Poetry

بہار کیا، اب خزاں بھی مجھ کو
 گلے لگائے تو کچھ نہ پائے

میں برگِ صحرا ہوں ، یوں بھی مجھ کو
 ہَوا اُڑائے تو کچھ نہ پائے

میں پستیوں میں پڑا ہوا ہوں
 زمیں کے ملبوس میں جڑا ہوں

مثالِ نقشِ قدم پڑا ہوں
 کوئی مٹائے، توکچھ نہ پائے

تمام رسمیں ہی توڑ دی ہیں
 کہ میں نے آنکھیں ہی پھوڑ دی ہیں

زمانہ اب مجھ کو آئینہ بھی
 مرا دکھائے تو کچھ نہ پائے

عجیب خواہش ہے میرے دل میں
 کبھی تو میری صدا کو سن کر

نظر جھکائے تو خوف کھائے
 نظر اُٹھائے تو کچھ نہ پائے

میں اپنی بے مائیگی چھپا کر
 کواڑ اپنے کھلے رکھوں گا

کہ میرے گھر میں اداس موسم کی
 شام آئے تو کچھ نہ پائے

تو آشنا ہے نہ اجنبی ہے
 ترا مرا پیار سرسری ہے

مگر یہ کیا رسمِ دوستی ہے
 تو روٹھ جائے تو کچھ نہ پائے

اُسے گنوا کر پھر اس کو پانے کا
 شوق دل میں تو یوں ہے محسن

 کہ جیسے پانی پہ دائرہ سا
 . . . کوئی بنائے تو کچھ نہ پائے


Bahaar Kia Ab Khizaa'n Bhi Mujhko
Galey Lagaye Tou Kuch Na Paaye

Main Barg-E-Sehra Hoon Youn Bhi Mujh Ko
Hawaa Urraaye To Kuch Na Paaye

Main Pastiyo'n Mein Parra Hua Hoon
Zameen K Malboos Mein Jurra Hoon

Misaal-E-Naqash-E-Qadam Parra Hoon
Koi Mitaaye To Kuch Na Paaye

Tamaam Rasmain He Torr De Hein
K Mein Ne Aankhein He Phorr Di Hein

Zamaana Ab Mujh Ko  Aaeina Bhi
Mera Dikhaaye Tou Kuch Na Paaye

Ajeeb Khuwahish Hai Mere Dil Mein
Kabhi Tou Meri Sada Ko Sun Kar

Nazar Jhukaaye Tou Khof Khaaye
Nazar Uthaaye Tou Kuch Na Paaye

Main Apni Be-Mayegi Chupa Kar
Kuwaarr Apne Khuley Rakhoo'n Ga

K Mere Ghar Mein Udaas Mosam Ki
Shaam Aaye Tou Kuch Na Paaye

Tu Aashna Hai Na Ajnabi Hai
Tera Mera Piyar  Sarsari Hai

Magar Yeh Kiya Rasm-E-Dosti Hai
Tu Rooth Jaaye Tou Kuch Na Paaye

Usay Ganwa Kar Usay Phir Paaney Ka
Shoq Dil Mein Tou Youn Hai Mohsin

K Jaise Paani Pe Daayira Sa
Koi Banaaye Tou Kuch Na Paaye. . .

 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 


Friday, 23 May 2014

Gir Chukey Hein Teri Kitaabon Se

Sad Poetry

سوکھے گلابوں کی طرح ہم شائد
گر چکے ہیں تیری کتابوں سے

Sookhey Gulabon Ki Tarha Hum Shayad
Gir Chukey Hein Teri Kitaabon Se

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Thursday, 22 May 2014

محبت کی گذر گاہیں کشادہ کیوں نہیں ہوتی

Sad Poetry Collection

ملاقاتیں ہماری بے ارادہ کیوں نہیں ہوتی
محبت کی گذر گاہیں کشادہ  کیوں نہیں ہوتی

ہمارے درمیاں یہ اجنبیت کا دھواں کیوں ہے
ہماری چاہتیں حد سے زیادہ کیوں نہیں ہوتی

میرے جذبات کی خوشبو اترتی کیوں نہیں تجھ میں
ترے دل کی سبھی راہیں کشادہ کیوں نہیں ہوتی

خوشی کی چند بوندیں جسم کو گیلا تو کر دیتی ہیں
میسر راتیں ہیں لیکن یہ  زیادہ کیوں نہیں ہوتی

تیرے نزدیک رہ کر بھی یہ دوری کا گماں کیسا
  تیری بانہیں مری خاطر کشادہ کیوں نہیں ہوتی

بڑے نازو ادا اکثر یہ دکھلاتی ہے رستوں میں
.یہ حسیں لڑکیاں بھی آخر سادہ  کیوں نہیں ہوتی 

Mulaqatein Hamaari Be-Irada’h Kiun Nahi Hoti
Mohabbat Ki Guzar Gaahein Kushadah Kiun Nahi Hoti

Hamaare Darmiyan Ye Ajnabiyat Ka Dhuwaan Kiun Hai
Hamaari Chahten Had Se Ziyada’h  Kiun Nahi Hoti

Merey Jazbaat Ki Khushbu Utarti Kiun Nahi Tujh Mein
Tere Dil Ki Sabhi Raahein Kushada’h  Kiun Nahi Hoti

Khushi Ki Chand Boondein Jisam Ko Geela Kar To Deti Hain
Muyassar Rahtein Hein  Lekin Ziyada’h  Kiun Nahi Hoti

Terey Nazdeek Reh Kar Bhi Ye Doori Ka Gumaan Kesa
Teri Baahein Meri Khaatir Kushada’h  Kiun Nahi Hoti

Barre Naz-O-Ada Aksar Ye Dikhlati Hein Raaston Mein
Ye Haseen Larkiyan Bhi Aakhir Saada’h  Kiun Nahi Hoti .

 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Wednesday, 21 May 2014

Daikh Hum Bhi Khuda K Bandey Hein

Sahib Poetry Collection

تیرا رتبہ بہت بلند سہی
دیکھ ہم بھی خدا کے بندے ہیں


Tera Rutba Bohat Buland Sahi
Daikh Hum Bhi Khuda K Bandey Hein

 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share I



Tuesday, 20 May 2014

Ik Dosrey Ko Jaan Na Paey Tamaam Umar

Sad Poetry

دشمن کو ہارنے سے بچانا عجیب تھا
ترکِ مدافعت  کا بہانا عجیب تھا

اک دوسرے کو جان نہ پائے تمام عمر
ہم ہی عجیب تھے کہ زمانہ عجیب تھا

زندہ بچا نہ قتل ہُوا طائرِ اُمید
اُس تیرِ نیم کش کا نشانہ عجیب تھا

سُنتے رہے اخیر تلک مہر و ماہ و نجم
اس خاکداں کا سارا فسانہ عجیب تھا

جس راہ سے کبھی نہیں ممکن تیرا گزر
تیرے طلب گروں کا ٹھکانہ عجیب تھا

اب کے تو یہ ہُوا ہے کہ میرے بُلانے سے
اس زود رنج شخص کا آنا عجیب تھا

کھونا تو خیر تھا ہی کسی دن اُسے مگر
ایسے ہَوا مزاج کا پانا عجیب تھا

سب داغ بارشوں کی ہَوا میں بُجھے رہے
بس دل کا ایک زخم پرانا عجیب تھا ... 

Dushman Ko Haarney Se Bachana Ajeeb Tha
Tark-e-Mudafe'at  Ka  Bahana Ajeeb Tha

Ik Dosrey Ko Jaan Na Paey Tamaam Umar
Hum He Ajeeb Thay K  Zamana Ajeeb Tha

Zinda Bacha Na Qatal Hua Taair-e-Umeed
Us Teer-e-Neem Kash Ka  Nishana Ajeeb Tha

Suntey Rahey Akheer Talak Mehr-o-Maah-o-Najm
Us Khaak-Daan Ka Sara  Fasana Ajeeb Tha

Jis Raah Se Kabhi Nahi Mumkin Tera Guzar
Terey Talab-Garon Ka  Thikana Ajeeb Tha

Ab K Tou Yeh Hua Hai Ke'h Merey Bulaney Se
Us Zoud Ranj Shakhs Ka  Aana Ajeeb Tha

Khona Tou Khair Tha He Kisi Din Usay Magar
Aisay Hawa Mijaaz Ka  Pana Ajeeb Tha

Sab Daag Barishon Ki Hawa Mein Bujhey Rahey
 ..... .Bus Dil Ka Aik Zakhm  Purana Ajeeb Tha


 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Monday, 19 May 2014

Faasley Barh Gaey Hein

Love Poetry

فاصلے بڑھ گئے ہیں
..اور کم بخت محبت بھی   

Faasley Barh Gaey Hein
  Aur Kambakht Mohabbat Bhi..


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Sunday, 18 May 2014

Ab Tou Mein Din K Ujaaley Se Bhi Dar Jata Hoon


Best Urdu Ghazals

کبھی میں عالم امکاں سے گزر جاتا ہوں
اور کبھی جسم کی دلدل میں اتر جاتا ہوں

یہ بھرا شہر کبھی مجھ میں سمٹ آتا ہے
کبھی میں شہر میں ہرگام بکھر جاتا ہوں

شہر سے رہتی ہے اک جنگ مسلسل دن بھر
شہر جب ہانپنے لگتا ہے تو گھر جاتا ہوں

اس کشاکش میں ہی ملتا ہے نشاں ہونے کا
جب بھی تکمیل کا احساس ہو، مر جاتا ہوں

لے اڑی روشنی ہی جرات بینائی مری
اب تو میں دن کے اجالے سے ڈر جاتا ہوں

اپنے ذرے ہی نظر آتے ہیں تا حد نظر
اک ذرا سر کو جھکاؤں تو بکھر جاتا ہوں

ایک اک آنکھ میں اپنی ہی کہانی دیکھوں
اپنا چہرہ ہی نظر آتا ہے جدھر جاتا ہوں

شہر سجتے ہیں،گزرگاہیں چمک اٹھتی ہیں
اپنے ہی خون میں ڈوبوں تو سنور جاتا ہوں

شام کھلتا ہی نہیں موت کا ہنگام ہے کیا
.... وقت رک جاتا ہے یا میں ہی ٹھہر جاتا ہوں 

Kabhi Mein Aalam-E-Imkaan Se Guzar Jata Hoon
Aur Kabhi Jism Ki Daldal Mein Utar Jata Hoon

Ye Bhara Shehar Kabhi Mujh Mein Simat Aata Hai
Kabhi Main Shehar Mein Har Gaam Bikhar Jata Hoon

Shehar Se Rehti Hai Ek Jang Musalsal Din Bhar
Shehar Jab Haanpne Lagta Hai Tou Ghar Jata Hoon

Is Kasha-kash Mein He Milta Hai Nishaan Honey Ka
Jab Bhi Takmeel Ka Ehsaas Ho , Mar Jata Hoon

Le Urri Roshni He Jurrat-E-Beenaayi Meri
Ab Tou Mein Din K Ujaaley Se Bhi Dar Jata Hoon

Apne Zarrey  He Nazar Aatey Hein Taa Hadd-E-Nazar
Ek Zara Sar Ko Jhukaao'n Tou Bikhar Jata Hoon

Aik Ik Aankh Mein Apni He Kahani Dekhon
Apna Chehra He Nazar Aata Hai Jidhar Jata Hoon

Sheher Sajaate Hein, Guzar-Gaahein Chamak Uthti Hein
Apne He Khoon Mein Doobo'n Tou Sanwar Jata Hoon

Shaam Khulta He Nahi Mout Ka Hangaam Hai Kiya
Waqat Ruk Jata Hai Ya Mein He Thehar Jata Hoon...



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Sath Lamhon Ka Yaad Barson Ki

Yaad Poetry

ساتھ لمحوں کا،یاد برسوں کی
..اچھے لوگوں کی یہ بات بری لگتی ھے 

Sath Lamhon Ka Yaad Barson Ki
  Achay Logon Ki Yeh Baat Buri Lagti Hai..

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Saturday, 17 May 2014

Faaqa Gareeb-e-Shehar K Bachon Mein Butt Gaya


Sajid Poetry

اندھیرے شکسة گھر کی منڈیروں کو مل گۓ
سورج بڑے محل کے دریچوں میں بٹ گیا

روٹی امیر شہرکے کتوں نے چھین لی
 فاقہ غریب شہر کے بچوں میں بٹ گیا ...
    
Andhere Shikasta Ghar Ki Mundairon Ko Mil Gaey
Sooraj Barrey Mehal K Dareechon Mein Butt Gaya

Roti Ameer-E-Shehar K Kutton Ne Cheen Li
... Faaqa Gareeb-E-Shehar K Bachon Mein Butt Gaya   
  
Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It