Thursday, 31 October 2013

Baadshaho'n Ki Tarha Dil Pay Hukoomat Kar K ...

Dil Pay Hakoomat


    زلف کو صندلی جھونکا جو کبھی کھولے گا
    جسم ٹوٹے ہوئے پتے کی طرح ڈولے گا

    بادشاہوں کی طرح دل پہ حکومت کرکے
    وہ مجھے تاش کے پتوں کی طرح رولے گا

    جنبش لب سے بھی ہوتا ہے عیاں سب مطلب
    وہ مری بات ترازو میں مگر تولے گا

    کسی برگد کی گھنی شاخ سے دل کا پنچھی
    میری تنہا ئی کو دیکھے گا تو کچھ بولے گا

    چاند پونم کا سرکتی ہوئی ناگن کی طرح
    نیلگوں زہر مرے خون میں آ گھو لے گا

    اڑ گیا سوچ کا پنچھی بھی وہاں سے نیناں
   .... .... کوئی سنسان بنیرے پہ نہیں بولے گا​


Zulf Ko Sandali Jhonka Jo Kabhi Kholey Ga
Jism Tootay Huey Pattay Ki Tarha Dolay Ga

Baadshaho'n Ki Tarha Dil Pay Hukoomat Kar K
Woh Mujhe Taash K Patto'n Ki Tarha Rolay Ga

Janbish-E-Lab Se Bhi Hota Hai Ayaa'n Sab Matlab
Woh Meri Baat Tarazoo Mein Magar Tolay Ga

Kisi Bargad Ki Ghani Shakh Se Dil Ka Panchi
Meri Tanhai Ko Dekhay Ga Tou Kuch Bolay Ga

Chaand Poonam Ka Sarakti Hui Nagan Ki Tarha
Neelgo'n Zehar Merey Khoon Mein Aa Gholay Ga

Urr Gaya Soch Ka Panchi Bhi Wahan Se Nainaa'n
Koi Sunsaan Baneray Pay Nahi Bolay Ga .... ..... 

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Wednesday, 30 October 2013

Be-Rooh Larkiyo'n Ka Thikana Bana Hua ... ....

Kamra Hai Mera

بے روح لڑکیوں کا ٹھکانہ بنا ہوا
کمرہ ہے میرا آئینہ خانہ بنا ہوا

میں نے تو کوئی بات کسی سے نہیں کہی
سوچا ہے جو وہی ہے فسانہ بنا ہوا

ندیا میں کس نےرکھ دیئےجلتےہوئےچراغ
موسم ہے چشمِ تر کا سہانا بنا ہوا

عورت کا ذہن مرد کی اس کائنات میں
اب تک ہے الجھنوں کا نشانہ بنا ہوا

ممکن ہے مار دے مجھے اس کی کوئی خبر
دشمن ہے جس کا میرا گھرانہ بنا ہوا

بارش کی آگ ہے مرے اند ر لگی ہوئی
بادل ہے آنسوؤں کا بہانہ بنا ہوا

نیناں کئی برس سے ہوا کی ہوں ہم نفس
 ... ....ہے یہ بدن اُسی کا خزانہ بنا ہوا


Be-Rooh Larkiyo'n Ka Thikana Bana Hua
Kamra Hai Mera Aaiena Khana Bana Hua

Mein Ne Tou Koi Baat Kisi Se Nahi Kahi
Socha Hay Jo Wohi Hai Fasana Bana Hua

Nadya Mein Kis Ne Rakh Diye Jaltey Heuy Charag
Mosam Hai Chashm-e-Tar Ka Suhana Bana Hua

Aurat Ka Zehan Mard Ki Is Kainaat Mein
Ab Tak Hai Uljhano Ka Thikana Bana Hua

Mumkin Hai Maar Day Mujhe Uski Koi Khabar
Dushman Hai Jis Ka Mera Gharana Bana Hua

Barish Ki Aag Hai Merey Andar Lagi Hui
Badal Hai Aansuo'n Ka Bahana Bana Hua

Naina'n Kai Baras Se Hawa Ki Hoon Hum-Nafas
Hai Yeh Badan Ussi Ka Thikana Bana Hua .. ...

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Mohabbat Aur Kahani Mein Koi Rishta Nahi Hota ....

Tumeh Kese Bataen

تمہیں کیسے بتائیں ہم
محبت اور کہانی میں کوئی رشتہ نہیں ہوتا
کہانی میں
تو ہم واپس بھی آتے ہیں
.محبت میں پلٹنے کا کوئی رستہ نہیں ہوتا


Tumeh Kesey Batae'n Hum
Mohabbat Aur Kahani Mein Koi Rishta Nahi Hota
Kahani Mein 
Tou Hum Wapas Bhi Aatay Hein
Mohabbat Mein Palatney Ka Koi Rasta Nahi Hota.

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Tuesday, 29 October 2013

Saayyaa’n Zaat Adhoori Hai , Saayyaa’n Baat Adhoori Hai ... ..

Saayyaa’n Baat Adhoori Hai

سائیاں ذات ادھوری ہے، سائیاں بات ادھوری ہے
سائیاں رات ادھوری ہے، سائیاں مات ادھوری ہے
دشمن چوکنا ہے لیکن، سائیاں گھات ادھوری ہے
  
سائیاں رنج ملال بہت، دیوانے بے حال بہت
قدم قدم پر جال بہت، پیار محبت کال بہت
اور اس عالم میں سائیاں، گذر گئے ہیں سال بہت
  
سائیاں ہر سو درد بہت، موسم موسم سرد بہت
رستہ رستہ گرد بہت، چہرہ چہرہ زرد بہت
اور ستم ڈھانے کی خاطر، تیرا اک اک فرد بہت
  
سائیاں تیرے شہر بہت، گلی گلی میں زہر بہت
خوف زدہ ہے دہر بہت، اس پہ تیرا قہر بہت
کالی راتیں اتنی کیوں، ہم کو اک ہی پہر بہت
  
سائیاں دل مجبور بہت، روح بھی چور و چور بہت
پیشانی بے نور بہت، اور لمحے مغرور بہت
ایسے مشکل عالم میں، تو بھی ہم سے دور بہت
  
سائیاں راہیں تنگ بہت، دل کم ہیں اور سنگ بہت
پھر بھی تیرے رنگ بہت، خلقت ساری دنگ بہت
سائیاں تم کو آتے ہے، بہلانے کے ڈھنگ بہت
  
سائیاں میرے تارے گم، رات کے چند سہارے گم
سارے جان سے پیارے گم، آنکھیں گم نظارے گم
ریت میں آنسو ڈوب گئے، راکھ میں ہوئے شرارے گم
  
سائیاں رشتے ٹوٹ گئے، سائیاں اپنے چھوٹ گئے
سچ گئے اور جھوٹ گئے، تیز مقدر پھوٹ گئے
جانے کیسے ڈاکو تھے، جو لوٹے ہوئوں کو لوٹ گئے
  
سائیاں تنہا شاموں میں، چن گئے ہیں بامو میں
چاہت کے الزاموں میں، شامل ہوئے ہے غلاموں میں
اپنی ذات نہ ذاتوں میں، اپنا نام نہ ناموں میں

سائیاں ویرانی کے صدقے، اپنی یزدانی کے صدقے
جبر انسانی کے صدقے، لمبی زندانی کے صدقے
سائیاں میرے اچھے سائیاں، اپنی رحمانی کے صدقے
  
سائیاں میرے درد گھٹا، سائیاں میرے زخم بجھا
سائیاں میرے عیب مٹا، سائیاں کوئی نوید سنا
اتنے کالے موسم میں، سائیاں اپنا آپ دکھا
  

Saayyaa’n Zaat Adhoori Hai , Saayyaa’n Baat Adhoori Hai
Saayyaa’n Raat Adhoori Hai , Saayyaa’n Maat Adhoori Hai
Dushman Chokanna Hai Lekin, Saayyaa’n Ghaat Adhoori Hai

Saayyaa’n Ranj Malaal Bohat , Diwanay  Be-Haal Bohat
Qadam Qadam Par Jaal Bohat , Piyar Mohabbat Kaal Bohat
Aur Is Aalam Mein Saayyaa’n, Guzar Gaey Hein Saal Bohat

Saayyaa’n Har Soo Dard Bohat, Mosam Mosam Sard Bohat
Rasta Rasta Gard Bohat , Chehra Chehra Zard Bohat
Aur Sitam Dhanay Ki Khatir , Tera Ik Ik Fard Bohat

Saayyaa’n Terey Shehar Bohat , Gali Gali Mein Zehar Bohat
Khof Zada Hai Dehar Bohat , Us Par Tera Qehar Bohat
Kaali Ratein Itni Kiun , Hum Ko Ik He Pehar Bohat

Saayyaa’n Dil Majboor Bohat, Rooh Bhi Choor-o-Choor Bohat
Paishaani Be-Noor Bohat , Aur Lamhay Magroor Bohat
Aisay Mushkil Aalam Mein , tu Bhi Hum Se Door Bohat

Saayyaa’n Raahein Tang Bohat , Dil Kam Hein Aur Sung Bohat
Phir Bhi Terey rung Bohat, Khalqat Sari Dung Bohat
Saayyaa’n Tum Ko Aatay Hein , Behlaney K Dhang Bohat

Saayyaa’n Merey Taray Ghum, Raat K Chund Saharey Ghum
Saray Jaa’n Se Piyare Ghum, Aankhein Ghum Nazaray Ghum
Rait Mein Aansu Doob Gaey, Raakh Mein Huey Shararay Ghum

Saayyaa’n Rishtay Toot Gaey, Saayyaa’n Apne Chhoot Gaey
Such Gaey Aur Jhoot Gaey, taiz Muqaddar Phoot Gaey
Janey Kese Daku Thay, Jo Lootay Huwo’n Ko Loot Gaey

Saayyaa’n Tanha Shamo’n Mein, Chun Gaey Hein Baamo Mein
Chahat K Ilzaamo’n Mein, Shamil Huey Hein Ghulamo’n Mein
Apni Zaat Na Zaato’n Mein, Apna Naam Na Naam’on Mein

Saayyaa’n Veerani K Sadqey , Apni Yazdani K Sadqey
Jabr-e-Insani K Sadqey, Lambi Zindani K Sadqey
Saayyaa’n Mere Achay Saayyaa’n, Apni Rehmani K Sadqey

Saayyaa’n Merey Dard Ghata, Saayyaa’n Merey Zakhm Bujha
Saayyaa’n Mere Aib Mitta, Saayyaa’n Koi Naveed Suna
Itney Kaalay Mosam Mein, Saayyaa’n Apna Aap Dikha … ..

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Dil Ko Dhokay Us Mohabbat Baaz Nay ... ...

Mohabbat Baaz Nay

   کیا بتائیں کیوں دئیے د مساز نے
    زخمِ تنہائی مِرے ہمراز نے

    اس کہانی کو ملے انجام کیا
    جس کو رُسوا کر دیا آغاز نے

    شہر کو کچھ اور عنواں دے دئیے
    میری لغزش اور ترے انداز نے

    کِس یقیں اور کِس تسلسل سے دئے
    دل کو دھو کے اس محّبت باز نے

    کتنا سُندر کِتنا کومل کر دیا
     ... ... میرے گیتوں کو تری آواز نے

Kia Batae’n Kiun Diye Damsaaz Nay
Zakhm-e-Tanhai Mere Humraz Nay

Us Kahani Ko Milay Anjaam Kia
Jis Ko Ruswa Kardiya Aaghaz Nay

Shehar Ko Kuch Aur Unwaa'n De Diye
Meri Lagzish Aur Terey Andaaz Nay

Kis Yaqeen Aur Kis Tasalsul Say Diye
Dil Ko Dhokay Us Mohabbat Baaz Nay

Kitna Sundar Kitna Komal Kar Diya
Mere Geeto'n Ko Teri Aawaaz Nay...
    ​
Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Aur Badan Be-Libaas Hotey Ja Rahey Hein ... ...

Meelon Tak

اگ رہی ہے کپاس میلوں  تک
اور بدن بے لباس ہوتے جا رہے ہیں ۔

Ugg Rahi Hai Kapaas Meelo’n Tak
   Aur Badan Be-Libaas Hotey Ja Rahey Hein.

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It


Mukammal Bus Khuda Ki Zaat Hoti Hai... ...

Khuda Ki Zaat

مکمل کچھ نہیں ہوتا

        اسے کہنا
مکمل کچھ نہیں ہوتا
ملن بھی نامکمل ہے
جدائی بھی ادھوری ہے
یہاں اک موت پوری ہے

اسے کہنا
اداسی جب رگوں میں خون کی مانند اترتی ہے
بہت نقصان کرتی ہے

اسے کہنا
بساط عشق پرجب مات ہوتی ہے
دکھوں کے شہر میں جب رات ہوتی ہے

 ... ....مکمل بس خدا کی زات ہوتی ہے


Usay Kehna
Mukammal Kuch Nahi Hota
Milan Bhi Na Mukammal Hai
Judai Bhi Adhori Hai
Yahan Ik Mout Pori Hai

Usay Kehna
Udasi Jab Rago'n Mein Khoon Ki Manind Utarti Hai
Bohat Nuqsan Karti Hai

Usay Kehna
Bisat-E-Ishq Par Jab Maat Hoti Hai
Dukho'n K Shehar Mein Jab Raat Hoti Hai

Mukammal Bus Khuda Ki Zaat Hoti Hai... ...

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Monday, 28 October 2013

Sharar-o-Shola Ki Zad Mein Hai Wadiy-e-Kashmir ... ...

Kashmir

ضمیرِ عالمِ انسانیت خبر ہے تجھے
شرار و شعلہ کی زد میں ہے وادی کشمیر

تجھے خبر ہے کہ جنّت نشاں یہ وادی
لہو لہو ہُوئی جاتی ہے دستِ قاتل سے

جہاں یہ روشنی خُوشبو بکھرتی تھی کبھی
وہاں پہ خاک ہُوئی جا رہی ہے آزادی

وہ پھُول اُگاتی زمیں اور گیت گاتی زمیں
وفا کے رنگ محبت سے مُسکراتی زمیں

کہ جس کے خواب بھی روشن ، نگاہ بھی روشن
کہ جِس کے راستے دل سے گُزر کے جاتے ہیں

وہ دلفریب ،دل آویز، دلُربا منظر
گُزرنے والوں کے دل اُترتے جاتے ہیں

ضمیرِ عالمِ انسانیت خبر ہے تجھے
وہ منظروں میں جو منظر تھے بجھتے جاتے تھے

وہ پھُول سوکھتے اور گیت مرتے جاتے ہیں
ضمیرِ عالمِ انسانیت خبر ہے تجھے

لہو لہو ہُوئی جاتی ہے دستِ قاتل سے
یہ دستِ قتل وفا جتنا بڑھتا جائے گا

ترے وقار کی گردن تلک بھی آ جائے گا
 .. .. ضمیرِ عالم انسانیت سنبھال اسے

Zameer-e-Alam-e-Insaniyat Khabar Hai Tujhe
Sharar-o-Shola Ki Zad Mein Hai Wadiy-e-Kashmir

Tujhe Khabar Hai Jannat Nishaa’n Yeh Waadi
Lahoo Lahoo Hui Jati Hai Dast-e-Qatil Say

Jahan Pe Roshni Khushbu Bakhairti Thi Kabhi
Waha’n Pay Khaak Hui Ja Rahi Hai Azaadi

Woh Phool Ugati Zameen Aur Geet Gati Zameen
Wafa K Rung-e-Mohabbat Se Muskurati Zameen

Keh Jisk Khuwab Bhi Roshan, Nigah Bhi Roshan
Keh Jisk Rastay Dil Se Guzar K Jatay Hein

Woh Dilfaraib, Dil Aawaiz, Dilruba Manzar
Guzarne Walo’n K Dil Say Utartey Jatay Hein

Zameer-e-Alam-e-Insaniyat Khabar Hai Tujhey
Woh Manzaro’n Mein Jo Manzar Thay Bujhtey Jatay Hein

Woh Phool Sookhtay Aur Geet Martey Jatay Hein
Zameer-e-Alam-e-Insaniyat Khabar Hai Tujhe

Lahoo Lahoo Hui Jati Hai Dast-e-Qatil Say
Yeh Dast-e-Qatl-e-Wafa Jitna Barhta Jaey Ga

Tere Waqar Ki Gardan Talak Bhi Aaega
Zameer-e-Alam-e-Insaniyat Sanbhal Issay …

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Hawa K Shor Ko Rakhna Aseer Jungle Mein ... ...

Jungle Mein

    ہوا کے شور کو رکھنا اسیر جنگل میں
    میں سن رہی ہوں قلم کی صریر جنگل میں

    ہتھیلیوں پہ ہوا سنسناتی پھرتی ہے
    میں اس کی چاہَ کی ڈھونڈوں لکیر جنگل میں

    خیال رکھنا ہے پیڑوں کا خشک سالی میں
    نکالنی ہے مجھے جوئے شیر جنگل میں

    دیارِ جاں میں پھرے رات دندناتی ہوئے
    ادھر ہے قید سحر کا سفیر جنگل میں

    عجیب لوگ ہیں دل کے شکار پر نکلے
    کمان شہر میں رکھتے ہیں تیر جنگل میں

    طلب کےشہر میں تھا جو سدا قیام پذیر
    سنا ہے رہتا ہے اب وہ فقیر جنگل میں

    کبھی جو چھو کے گزرجائے نرم سا جھونکا
    یہ زلف لے کر اڑائے شریر جنگل میں

    بڑے سکون سے رہتے ہیں لوگ بستی کی
    رکھی ہےدشت میں غیرت ضمیر جنگل میں

    ہوا میں آج بھی روتی ہے بانسری نیناں
  .. ..  اداس پھرتی ہے صدیوں سے ہیر جنگل میں​ 


Hawa K Shor Ko Rakhna Aseer Jungle Mein
Mein Sun Rahi Hoon Qalam Ki Sareer Jungle Mein

Hatheliyo’n Pay Hawa Sansanaati Phirti Hai
Mein Uski Chah Ki Dhoondu'n Lakeer Jungle Mein

Kahayal Rakhna hai Pairro'n Ka Khushk Saali MEin
Nikaalni Hai Mujhe Joey Shair jungle Mein

Diyar-e-Jaa'n MEin Phiray Raat dandanati Huey
Udhar Hai Qaid Sehar Ka Safeer Jungle Mein

Ajeeb Log Hein Dil K Shikaar Par Nikley
Kamaan Shehar Mein Rakhtey Hein, Teer Jungle Mein

Talab K Shehar Mein Tha Jo Sada Qayaam Pazeer
Suna Hai Rehta Hai Ab Woh Faqeer Jungle Mein

Kabhi Jo Chhoo Kar Guzar Jaey Naram Sa Jhonka
Yeh Zulf Lay Kar Urraey Shareer Jungle Mein

Baday Sukoon Se Rehtey Hein Log Basti K
Rakhi Hai Dasht Mein Gairat Zameer Jungle Mein

Hawa Mein Aaj Bhi Roti Hai Baa'nsuri Naina'n
Udas Phirti Hai Sadyo'n Se HEER Jungle Mein ... ..

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Sunday, 27 October 2013

Na Koi Khuwab Na Saheli Thi .. ..

kahan k Sachay

نا کوئی خواب نا سہیلی تھی
اس محبت میں میں اکیلی تھی

عشق میں تم کہاں کے سچے تھے
جو اذیت تھی ہم نے جھیلی تھی

یاد اب کچھ نہیں رہا لیکن
ایک دریا تھا یا حویلی تھی

جس نے الجھا کے رکھ دیا دل کو
وہ محبت تھی یا پہیلی تھی

میں ذرا سی بھی کم وفا کرتی
تم نے تو میری جان لے لی تھی

وقت کے سانپ کھا گئے اسکو
میرے آنگن میں ایک چمیلی تھی

اس شب غم میں کس کو بتلائوں
 .. ..کتنی روشن میری ہتھیلی تھی


Na Koi Khuwab Na Saheli Thi
Is Mohabbat Mein, Mein Akeli Thi

Ishq Mein Tum Kahan K Sachay Thay
Jo Aziyat Thi Hum Ne Jhaili Thi

Yaad Ab Kuch Nahi Raha Lekin
Aik Darya Tha Ya Haweli Thi

Jis Ne Uljha K Rakh Diya Dil Ko
Woh Mohabbat Thi Ya Paheli Thi

Mein Zara Si Bhi Kam Wafa Karti
Tum Ne Tou Meri Jaan Lay Li Thi

Waqt K Saanp Kha Gaey Us Ko
Mere Aangan Mein Ik Chanbeli Thi

Is Shab-e-Gham Mein Kis Ko Batlaauo'n
Kitni Roshan Meri Hatheli Thi ... 

Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It