Sunday, 30 June 2013

Na Sira Mila Hai Koi , Na Suraag Zindagi Ka.....

Daagh Zindagi Ka

نہ سرا ملا ہے کوئی ، نہ سراغ  زندگی  کا
یہ ہے میری کوئی ہستی، کہ ہے داغ زندگی کا

یہی وصل کی حقیقت، یہی ہجر کی حقیقت
کوئی موت کی ہے پروا، نہ دماغ زندگی کا

یہ بھی خوب ہے تماشا، یہ بہار یہ خزاں کا
یہی  موت  کا  ٹھکانہ ،  یہی باغ زندگی  کا

یہ میں اُسکو پی رہا ہوں، کہ وہ مجھکو پی رہا ہے
مرا  ہم نفَس  ازَل  سے ،  ہے ایاغ  زندگی  کا

اسد اُس سے پھر تو کہنا، یہی بات اک پرانی
....میں  مسافرِ  شبِ ہجر ،  تُو چراغ زندگی کا

Na Sira Mila Hai Koi , Na Suraag Zindagi Ka
Yeh Hai Meri Koi Hasti, K Hai Daag Zindagi Ka

Yehi Visl Ki Haqiqat , Yehi Hijr Ki Haqiqat
Koi Mout Ki Hai Parwah, Na Dimaag Zindagi Ka

Yeh Bhi Khoob Hai Tamasha, Yeh Bahaar Yeh Khizan Ka
Yehi Mout Ka Thikana , Yehi Baag Zindagi Ka

Ye Mein Usko P Raha Hoon. K Woh Mujhko P Raha Hai
Mera Hum-Nafas Azal Say , Hai Ayaag Zindagi Ka

Asad  Us Se Phir Tou Kehna , Yehi Baat Ik Purani
Mein Musafir-e- Shab-e-Hijr, Tu Charaag Zindagi Ka….


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Dil Par Jo Zakhm Hein Woh Dikhaen Kisi Ko Kia


Yaad Jo Aaen

دل پر جو زخم ہیں وہ دکھائیں کسی کو کیا
 اپنا  شریکِ درد  بنائیں کسی کو کیا

 ہر شخص اپنے اپنے غموں میں ہے مبتلا
 زنداں میں اپنے ساتھ رلائیں کسی کو کیا

 بچھڑے ہوئے وہ یار وہ چھوڑے ہوئے دیار
 رہ رہ کے ہم کو یاد جو آئیں کسی کو کیا

 رونے کو اپنے حال پہ تنہائی ہے بہت
 اس انجمن میں خود پہ ہنسائیں کسی کو کیا

 وہ بات چھیڑ جس سے جھلکتا ہو سب کا غم
 یادیں کسی کی تجھ کو ستائیں کسی کو کیا

 سوئے ہوئے ہیں لوگ تو ہوں گے سکون سے
 ہم جاگنے کا روگ لگائیں کسی کو کیا

 جالب نہ آئے گا کوئی احوال پوچھنے
... دیں شہرِ بے حساں میں صدائیں کسی کو کیا



Dil Par Jo Zakhm Hein Woh Dikhaen Kisi Ko Kia
Apna Shareek-e-Dard Banaen Kisi Ko Kia

Har Shakhs Apne Apne Ghamon Mein Hai Mubtila
Zindaan Mein Apne Sath Rulaen Kisi Ko Kia

Bichray Huey Woh Yaar, Woh Choray Huey Dayaar
Reh Reh K Humko Yaad Jo Aaen Kisi Ko Kia

Ronay Ko APne Haal Pay Tanhai Hai Bohat
Is Anjuman Mein Khud Pay Hansaen Kisi Ko Kia

Woh Baat Chairr Jis Se Jhalakta Ho Sab Ka Gham
Yaadein Kisi Ko Tujhko Sunaen Kisi Ko Kia

Soey Huey Hein Log Tou Hongay Sukoon Say
Hum Jaagne Ka Rog Lagaen Kisi Ko Kia

Jalib Na Aaega Koi Ehwaal Poochne
Dein Shehr-e-Be-Sada Mein Sadaein Kisi Ko Kia..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Dilkash Tareen Gunchon Ki Muskaan Titliyaan....

Woh Rehman Titliyaan

دلکش ترین غنچوں کی مسکان تتلیاں
 پروردگارِ حسن کی پہچان تتلیاں

 ریحان تتلیاں ، لؤلؤ و مرجان تتلیاں
 تخلیق کر رہا ہے وہ رحمان  تتلیاں

 ممکن نہیں اُڑان ، مساوی پروں بغیر
 خِلقت کا شاہکار  ہیں میزان  تتلیاں

 اکثر گلوں سے تتلیاں بڑھ کر حسین ہیں
 پھولوں کو چوم کر کریں احسان تتلیاں

 کاغذ کے سبز باغ میں گل تو بہت ملے
 تا عمر ڈھونڈتا  رہا انسان  تتلیاں

 قوسِ قزح کے رقص نے دل شاد کر دیا
 گہری ترین اُداسی کا درمان تتلیاں

 شبنم ، مٹھاس ، غنچوں کے رازاور پنکھڑی
 خوشبو نگر سے لائی ہیں  سامان تتلیاں

 اِک شوخ تتلی جاں مرے ہاتھوں پہ دے گئی!
 تحریر کی ہیں تب سے مری جان تتلیاں

 بے ساختہ ثنائے خدا ، دل سے اُٹھی قیس
 پل بھر میں تازہ کر گئیں ایمان تتلیاں

Dilkash Tareen Gunchon Ki Muskaan Titliyaan
Parwardigar-e-Husn Ki Pehchaan Titliyaan

Rehan Titliyaan , Lolo-o-Majaan Titliyaan
Takhleeq Kar Raha Hai Woh Rehman Titliyaan

Mumkin Nahi Urraan Masavi Paron Bagair
Khalqat Ka Shahkaar Hein Meezan Titliyaan

Aksar Gulon Se Titliyaan Barh Kar Haseen Hein
Phoolon Ko Choom Kar Karen Ehsaan Titliyaan

Kagaz K Sabz Baag Mein Gul Tou Bohat Milay
Taa Umr Dhoondta Raha Insaan Titliyaan

Qoseh Qazah K Raqs Ne Dil Shaad Kar Diya
Gehri Tareen Udasi Ka Darmaan Titliyaan

Shabnaum, Mithas, Gunchon K Raaz Or Pankharri
Khushbu Nagar Se Laae Hai Samaan Titliyaan

Ik Shokh Titli, Jaan Mere Hathon Pay Day Gaie
Tehreer Ki Hein Tab Se Meri Jaan Titliyaan

Be-Saakhta Sana-e-Khuda , Dil Se Uthi Qais
Pal Bhar Mein Taza Kar Gaie Emaan Titliyaan..



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Husn-e-Gul Hai, Bahaar Daita Hai.....

Ishq Hasti Sanwaar

حسنِ
 گل ہے ، بہار دیتا ہے
 عشق ہستی سنوار دیتا ہے

 صرف اک دل کا رونا روتے ہو
 غم تو بستی اجاڑ دیتا ہے

 جو بھی دل چاہے دل کے ساتھ کرو
 دل تمہیں اختیار دیتا ہے

 چند گھڑیاں ادھار مانگی تھیں
 آج کل کون ادھار دیتا ہے

 آدمی بادشاہ ہے جنگل کا
 یہ تو اپنے بھی مار دیتا ہے

 خواب میں التجا وہ کرتے ہیں
... قیس زلفیں سنوار دیتا ہے


Husn Gul Hai, Bahaar Daita Hai
Ishq Hasti Sanwaar Daita Hai

Sirf Ik Dil Ka Rona Rotay Ho
Gham Tou Hasti Ujaarr Daita Hai

Jo Bhi Dil Chahe Dil K Sath Karo
Dil Tumeh Ikhtiyaar Daita Hai

Chund Gharryaan Udhaar Mangi Thi
Aaj Kal Kon Udhaar Daita Hai

Aadmi Baadshah Hai Jungle Ka
Yeh Tou Apne Bhi Maar Daita Hai

Khuwaab Mein Iltija Woh Karte Hein
Qais Zulfein Sanwaar Daita Hai..


 Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Shakl Uski Thi Dilbaron Jesi..

Dilbaron Jesi

شکل اس کی تھی دلبروں جيسی
 خو تھي ليکن ستمگروں جيسی

 اس کے لب تھے سکوت کے دريا
 اس کی آنکھيں سخنوروں جيسی

 ميری پرواز جاں ميں حائل ہے
 سانس ٹوٹے ہوئے پروں جيسی

 دل کي بستی ميں رونقيں ہيں مگر
 چند اجڑے ہوئے گھروں جيسی

 کون ديکھے گا اب صليبوں پر
 صورتيں وہ پيمبروں جيسی

 ميری دنيا کے بادشاہوں کی
 عادتيں ہيں گداگروں جيسی

 رخ پہ صحرا ہيں پياس کے محسن
... دل ميں لہريں سمندروں جيسی


Shakl Us Ki Thi Dilbaron Jesi
Khoo Thi Lekin Sitamgaron Jesi

Us K Lab Thay Sakoot K Darya
Us Ki Aankehn Sukhanwaron Jesi

Meri Parwaz-e-Jaan Mein Hayal Hai
Saans Tootay Huey Paron Jesi

Dil Ki Basti Mein Ronaqein Hein Magar
Chund Ujrray Huey Gharon Jesi

Kon Dekhy Ga Ab Saleebon Par
Sooratein Woh Payambaron Jesi

Meri Dunya K Baadshahon Ki
Aadatein Hein Gada Garon Jesi

Rukh Pay Sehra Hein Piyaas K Mohsin
Dil Mein Lehrein Samandaron Jesi…..


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Saturday, 29 June 2013

Rakho Gay Usay Yaad Tou Phir G Na Sako Gay........

Dar Bhool He Jana

رکھو گے اُسے یاد تو پھر جی نہ سکو گے
 گو کام یہ مشکل ہے مگر بھول ہی جانا

 دن کاٹیں گے کس طرح سے کیونکر یہ کٹے رات
 جنگل  میں  ٹھکانہ  ہے تو ڈر بھول ہی جانا

 اب معجزے ہوتے ہی نہیں اپنے جہاں میں
 چاہت کا فسوں اس کا اثر بھول ہی جانا

 تم لاکھ کرو جتن، کٹے گا یہ بہر طور
.. اُس شہر کو جانا ہے تو سر بھول ہی جانا


Rakho Gay Usay Yaad Tou Phir G Na Sako Gay
Go Kaam Yeh Mushkil Hai Magar Bhool Je Jana

Din Kaaten Gay Kis Tarha Se, Q Kar Ye Katay Raat
Jungle Mein Thikana Hai Tou Dar Bhool He Jana

Ab Mojzay Hotay He Nahi Apne Jahan Mein
Chahat Ka Fusoon Uska Asar Bhool He Jana

Tum Lakh Karo Jatan, Katay Gay Yeh Bahar Tor
Us Shehar Ko Jana Hai Tou Sar Bhool He Jana..


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It